جوہانسبرگ، لنیزیا میں ڈکیتی مزاحمت پر پاکستانی نوجوان قتل

جوہانسبرگ (ندیم شبیر سے )سائوتھ افریقہ میں ڈکیتی، ہائی جیکنگ اور قتل کی بڑھتی ہوئی وارداتوں میں آے روز اضافہ ہو رہا ہے جس کی بھینٹ ایک اور پاکستانی چڑھ گیا۔تفصیلات کے مطابق لنیزیا شہر میں ایک پا کستانی نوجوان ظفرحسین والد محمد بوٹا جو کہ جڑانوالہ کے رہائشی ہیں کو شوپرائٹ کے باہر دوران ڈکیتی قتل کر دیا گیا۔میت پاکستان بھجوانے کےلئے اقدامات کئے جا رہے ہیں،صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے یوتھ لیگ کے رہنما سید احمد ولید بخاری نے کہا کہ اگر ہمارے ہائی کمیشن نے سائوتھ افریقن اعلی حکام سے سنجیدگی سے بات نہ کی تو پھر ہمارا اللہ ہی حافظ ہے ان کا فرض ہے کہ ایسے واقعات پر ان سے احتجاج کریں ولید بخاری نے مزید کہا کہ ایسوسی ایشن کا بھی فرض ہے کہ وہ لوگ ایسے موقعہ پر اس علاقے کی ہائی کمان کے نوٹس میں ایسے واقعات کو لائیں۔انہوں نے کہا کہ میری گزارش ہے ان سب پاکستانی بھایوں سے جو سائوتھ افریقہ میں ٹریولنگ کا کاروبار کرتے ہیں کہ خدارا احتیاط سے کام پر جایا کریں آپ کی جانیں بہت قیمتی ہیں اللہ پاک ظفر کو جنت آل فردوس میں اعلی مقام عطا فرماے اور اس کے گھر والوں کو صبر جمیل عطا فرمائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں