کیا آپ کو معلوم ہے کہ معروف سنگر عدنان سمیع کے والد واقعی پاکستان ائیر فورس کے پائلٹ تھے

0
68

ممبئی (اے ون نیوز )گلو کار عدنان سمیع اکثر اوقات پاکستان کے خلاف بیان دیتے رہتے ہیں جس کے باعث انہیں پاکستانی سوشل میڈ یا پر تنقید کا نشانہ بنا یا جاتا ہے ۔اس بار بھی بھارت سے اپنی وفا داری ثابت کرنے کے لیے عدنان سمیع نے بھارتی فضائیہ اور مودی سرکار کے حق میں بیان دیا جو موجودہ صورتحال میں پاکستانیوں کو بالکل بھی پسند نہیں آیا ،گلوکار کے اس بیان کے بعد پاکستانی سوشل میڈ یا صارفین نے انہیں آڑھے ہاتھوں لیتے ہوئے طنزیہ طور پر پاکستانی خفیہ ادارے کا ایجنٹ کہنا شروع کردیا ۔عدنان سمیع کے خلاف یہ مہم اتنی مقبول ہوئی کہ دیکھتے ہی دیکھتے چند گھنٹوں میں پاکستانی ٹوئٹر پر یہ مہم ٹاپ ٹرینڈ بن گئی ۔عدنان سمیع کے اس بیان پر پاکستانیوں میں ابھی بھی غم و غصہ پا یا جاتا ہے لیکن بہت کم پاکستانی یہ جانتے ہیں کہ عدنان سمیع کے والد پاکستانی ائیر فورس میں فائٹر پائلٹ رہ چکے ہیں ۔عدنان سمیع کے والد فائٹر پائلٹ ہونے کے ساتھ ساتھ پاکستان کے انتہائی اہم عہدوںپر بھی فائز رہے ہیں اور انہیں پاکستان میں خدمات کے بدلے میں ستارہ امتیاز سے بھی نواز ا گیا

ارشد سمیع خان فائٹر پائلٹ ،سفارت کار اور بیورو کریٹ رہ چکے ہیں ۔انہوں نے فائٹر پائلٹ کے طور پر فرائض سر انجام دینے کے بعد تین صدور کے اے ڈی سی کے طور پر بھی خدمات سر انجام دیں۔اس کے بعد وہ وزارت خارجہ چلے گئے جہاں انہوں نے بطور چیف پروٹوکول آفیسر کام کیا ۔ارشد سمیع خان نے 14ممالک میں پاکستان کے سفارتکار کے طور پر کام کیا۔

عدنان سمیع کے دادا، جنرل محفوظ جان کا تعلق ہرات، افغانستان سے تھا اور وہ شاہ امان اللہ خان کے دورِ حکومت میں افغانستان کے چار صوبوں، ہرات، کابل، جلال آباد اور بلخ کے گورنر رہے تھے۔ عدنان کے پڑدادا جنرل احمد جان، بادشاہ امیر عبد الرحمن خان کے فوجی مشیر تھے اور انھوں نے کافرستان کو فتح کرکے اس کا نام نورستان رکھا تھا۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here